صفحہ اول » افواج » مرچنٹ نیوی یا تجارتی جہاز رانی

مرچنٹ نیوی یا تجارتی جہاز رانی

index
آج کے جہازوں کو بڑی حد تک خود کار اور محفوظ بنا دیا ہے اور سمندری سفر کے خطرات کو کم کر دیا ہے

مرچنٹ نیوی یا تجارتی جہاز رانی،بیش نوجوانوں کے لیے ایک رومان انگیز اور پر شوق پیشہ ہے۔ جھل مل کرتے بٹنوں سے سجی، سفید براق وردی، اور خوب صورت ٹوپی پہنے گہرے نیلے سمندروں میں، خوب صورت جہازوں کو چلانا، نئے نئے ملکوں کے ساحلوں پر اُترنا اور دنیا دیکھنا، سمندروں میں طوفانوں کا مقابلہ کرنا اور کبھی راستہ بھٹک کر انجان جزیروں پر اُتر جانا،….یہ تمام ایسے خواب انگیز مناظر ہیں جو نوعمری میں اکثر نوجوانوں کو اس پیشے کی طرف راغب کرتے ہیں۔ ٹیکنالوجی کی ترقی نے آج کے جہازوں کو بڑی حد تک خود کار اور محفوظ بنا دیا ہے اور سمندری سفر کے خطرات کو کم کر دیا ہے لیکن مہم جوئی کا رومان کسی نہ کسی حد تک برقرار ہے۔ اس مضمون میں مرچنٹ نیوی یا تجارتی جہاز رانی کے پیشے کے بارے میں گفتگو کی جائے گی۔
بحری جہازاپنی جگہ ایک چھوٹی سی دنیا ہوتی ہے ساحل چھوڑنے کے بعد سمندر میں جہاز کی اس دنیا کا مالک و مختار جہاز کا کپتان ہوتا ہے۔ اس دنیا کا انتظام کرنے اور جہاز کو رواں دواں رکھنے میں بہت سے لوگ کپتان کے ماتحت مختلف کام کرتے ہیں۔ جہاز کے بڑے بڑے شعبے یہ ہوتے ہیں:
1۔ ڈیک آفیسرز: سمندر میں جہاز کو محفوظ طریقے سے چلانے کے ذمہ دار ہوتے ہیں۔
2۔انجینئرآفیسرز: جہاز کے انجنوں اور متعلقہ مشینوں اور آلات کو رواں رکھنے اور ان کی دیکھ بھال ان کے ذمے ہوتی ہے۔
3۔کیٹرنگ آفیسرز: انھیں جہاز کے عملے اور مسافروں کے کھانے پینے اور ان کی رہائش و دیگر ضروریات کا خیال رکھنا ہوتا ہے۔
4۔ریڈیو آفیسرز: سمندر میں جہاز کا دوسرے جہازوں اور زمینی اسٹیشنوں سے ریڈیو کے ذریعے رابطہ رکھنا ان کی ذمہ داری ہے۔5۔ میڈیکل آفیسر: جہاز کے عملے کی صحت اور بیماری کی صورت میں علاج معالجے کا ذمہ دار ہوتا ہے۔ اس مضمون میں ہم ڈیک آفیسرز اور انجینئرآفیسرز کے بارے میں گفتگو کریں گے۔ ریڈیو آفیسرز کے پیشے کے بارے میں علیحدہ مضمون شائع کیا جائے گا۔ کیٹرنگ آفیسر کے لیے ضروری ہے کہ اس نے کیٹرنگ کی باقاعدہ تربیت حاصل کی ہو اور تجربہ رکھتا ہو۔ میڈیکل آفیسرز ڈاکٹر ہوتے ہیں۔
مرچنٹ نیوی، سمندری راستوں پر جہازوں کے ذریعے تجارتی سامان اور مسافروں کی نقل و حمل کی ذمہ دار ہوتی ہے۔ بحری جہازوں اور ان کے ذریعے لے جانے والے سامان کی اقسام مختلف ہوتی ہیں۔ اسی طرح جہازوں کی نوعیت اور سامان کے اعتبار سے راستے بھی بدلتے رہتے ہیں۔ تیل بردار جہاز (آئل ٹینکر) مال بردار جہاز (بلک کارگو) کنٹینر بردار جہاز (کنٹینر شپ)ملے جلے سامان کے جہاز (مکسڈ کارگو) سرد خانوں والے جہاز (ریفریجریٹر کارگو) مسافر بردار جہاز (پسنجر شپ) اور گاڑی اور مسافر بردار جہاز (کارفیریز اینڈ پسنجر کروزر شپ) جہازوں کی مختلف اقسام اور لے جانے والے سامان کی نوعیت کی مثالیں ہیں۔
کرئہ ارض کا تین چوتھائی حصہ سمندروں پر مشتمل ہے اور یہ وسیع و عریض سمندر بحری جہازوں کی جولاں گاہ ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

کیریر پلاننگ کے اہم نکات

اپنا جائزہ لیں اور خود کو جانیں اپنے اندر کی شخصیت کا جائزہ لیجیے۔ اپنے …