صفحہ اول » بلاگ » جنرل پریکٹشنز کی حیثیت سے فیملی ڈاکٹر بننے کا راستہ

جنرل پریکٹشنز کی حیثیت سے فیملی ڈاکٹر بننے کا راستہ

اگر کسی نوجوان نے جنرل پریکٹشنز کی حیثیت سے فیملی ڈاکٹر بننے کا راستہ اختیار کیا ہے تو ابتدا میں کچھغیر حقیقی صورتحال کا سامنا کرنا پڑے گا۔ چوں کہ میڈیکل کالجوں میں پڑھایا جانے والا نصاب پیشہ طب کے موجود ہ عملی تقاضوں سے ہم آہنگ نہیں ہے اس لیے صرف نظری تعلیم اور تربیت کی بنیادپر ڈاکٹر کو آج کے دور کے امراض کا علاج کامیابی سے کرنے میں دشواریاں پیش آتی ہیں۔ اس مسئلے کا حل یہ ہے کہ جو بھی ڈاکٹر جنرل پریکٹس میں آنا چاہے اسے چاہیے کہ ہاؤس جاب مکمل کرنے کے بعد مزید چھ چھ ماہ مندرجہ ذیل چار شعبوں میں کام کرے اور دو سال کے اس عملی اور قیمتی تجربے کے بعد اپنے کلینک کا آغاز کرے تاکہ وہ اعتماد کے ساتھ اپنے مریضوں کا تسلّی بخش علاج کرسکے۔ تربیت کے ان چار شعبوں میں عمومی ادویات (جنرل میڈیسن) بچوں کے امراض (پیڈیا ٹرکس) زچہ اور خواتین کے امراض (آبسٹیٹر کس اینڈ گائنا کالوجی) اور نفسیاتی امراض( سائیکاٹری) کے شعبے شامل ہیں۔ دو سال کی یہ تربیت کسی بھی ایسے اسپتال میں حاصل کی جاسکتی ہے جہاں یہ شعبے کام کر رہے ہوں۔

یہ بھی دیکھیں

کیریر پلاننگ کے اہم نکات

اپنا جائزہ لیں اور خود کو جانیں اپنے اندر کی شخصیت کا جائزہ لیجیے۔ اپنے …