مرچنٹ نیوی

تنخواہیں اور سہولتیں

پاکستان نیول اکادمی سے کامیاب ہونے والے کیڈٹس کوبحریہ میں بہ طور ایکٹنگ سب لیفٹیننٹ کمیشن دیا جاتا ہے۔ ایکٹنگ سب لیفٹیننٹ کی بنیادی تنخواہ 2260 روپے ماہانہ ہے۔ مختلف الاﺅنسز اس کے علاوہ ہیں۔ افسر اوراس کے اہلِ خانہ کو علاج کی مفت سہولت دستیاب ہوتی ہے۔

مواقع

پاک بحریہ میں افسروںکے داخلے کی دواسکیمیں ہیں ( تفصیل آگے) ہر اسکیم میں ہر سال حسبِ ضرورت امیدوار تربیت کے لیے منتخب کیے جاتے ہیں ۔

ترقی کے امکانات

پاکستان کی دوسری دفاعی خدمات کی طرح پاک بحریہ میں بھی افسروں کی ترقی ایک مرتب شدہ نظام کے تحت ہوتی ہے ۔ بحریہ میں لیفٹیننٹ کمانڈر کے عہدے تک ترقی بتدریج ہوتی چلی جاتی ہے۔ اس سے آگے کے عہدوں پر ترقی کے لیے امیدواروں میں سے انتخاب کیا جاتا ہے ۔

ذاتی خصوصیات

دفاعی شعبے میں سائنس اور ٹیکنالوجی کا استعمال بڑھ رہا ہے۔ بحریہ کے کام میں ایڈوانس ٹیکنالوجی داخل ہوتی جارہی ہے۔ پیچیدہ آلات، نہ صرف جہازرانی بلکہ دفاعی سائنس کی بھی لازمی ضرورت بن گئے ہیں۔ لہٰذا بحریہ میں شمولیت کے خواہش مند نوجوانوں کو ریاضی اورسائنسی رجحان کا حامل ہونا چاہیے۔ فوج کا کوئی بھی شعبہ ہو افسر کا کردار قائدانہ ہوتا ہے۔ اس لیے انتظامی صلاحیتیں بھی کام آتی ہیں۔ بحریہ کے افسروں میں آگے بڑھ کر ذمہ داری قبول کرنے ،بروقت صحیح فیصلہ کرنے اوراپنے احکامات دوسروںتک واضح طور پر پہنچانے کی صلاحیتیں ضروری ہیں ۔

پاک بحریہ میں بہ طور افسر شمولیت کا طریقہ

دفاعی سائنس اور بحری سائنس میں تکنیکی مہارت کے بڑھتے ہوئے رجحان کے پیشِ نظر، پاک بحریہ نے نوجوان امیدواروں کے لیے تعلیم و تربیت کا نظام ترتیت دیا ہے۔ اس نظام کے تحت زیرِ تربیت نوجوان انجینئرنگ کی سند حاصل کرتا ہے۔ اور اس فنی علم و مہارت کی بنیاد پر نہ صرف بحریہ میں ، بلکہ ملازمت سے سبکدوش ہونے کے بعد شہری زندگی میں ملک کی قابلِ قدر خدمات انجام دے سکتا ہے ۔ نئے نظامِ تربیت کے تحت نوجوان امیدواروں کو پاکستان نیول اکادمی میں ڈیڑھ سا ل کی تربیت کے بعد چھ ماہ کے لیے بحری تربیت دی جاتی ہے اور چھ ماہ پاکستان نیوی انجینئرنگ کالج میں تربیت دی جاتی ہے یہ ڈھائی سال کی مدت مکمل کرنے کے بعدامیدوار کو پاکستان نیوی انجینئرنگ کالج میں ڈیڑھ سال تعلیم حاصل کرنی ہوتی ہے۔ امتحان کامیاب کرنے والے امیداوروں کو بی ای (بیچلر آف انجینئرنگ) کی سند دی جاتی ہے۔ بحریہ میں بہ طور افسر شامل ہونے کے خواہش مندنوجوانوں کودو مواقع دستیاب ہیں ۔

این کیڈٹ اسکیم

سائنس کے ساتھ دسویں جماعت (یا مساوی امتحان) کامیاب ایسے نوجوان این کیڈٹ اسکیم میں داخل ہوکر بحریہ میں شامل ہوسکتے ہیں جنھوں نے 60 فیصد نمبر حاصل کیے ہیں۔ اپریل اور اکتوبر کے مہینوں میں اس اسکیم کے لیے درخواستیں طلب کی جاتی ہیں۔ عمر کی حد 15 سال تا 18 سال ہے۔ کم سے کم قد 5 فٹ 4 انچ ہوناچاہیے ۔ منتخب امیدواروں کا بحریہ میں این کیڈٹ کے طور پراندراج کرلیا جاتا ہے۔ یہ کیڈٹ دو سال تک بحریہ کے جونیئر کیڈٹ کالج ”پی این ایس رہنما“ میں یا جونیئر کیڈٹس بٹالین کاکول یا پی اے ایف کالج سرگودھا میں پری انجینئرنگ ،انٹرمیڈیٹ کی تعلیم حاصل کرتے ہیں جہاں انھیں لازماً فرسٹ یا سیکنڈڈویژن میں کامیاب ہونا چاہیے ۔ تعلیم کے ساتھ امیدواروں کو فوجی تربیت بھی دی جاتی ہے۔ تعلیم اور تربیت کے اخراجات پاک بحریہ برداشت کرتی ہے۔ کم سے کم 45 فی صد نمبر حاصل کرنے والے اور طبی طور پر موزوں امیدواروں کواین کیڈٹ اسکیم کی کامیاب تکمیل پر پاکستان نیول اکادمی میں بہ طور کیڈٹ داخلہ دے دیا جاتا ہے اوراکادمی کی تربیت مکمل کرنے کے بعد بحریہ میں ایکٹنگ سب لیفٹیننٹ کمیشن دے دیا جاتا ہے ۔